PakArmy 291

پاک فوج نے دہشتگردوں کے خلاف کیسے کامیاب آپریشن کیے؟

اسلام آباد: پاکستان میں دہشتگردوں کے خلاف فیصلہ کن آپریشن کے فیصلے کے بعد پاک فوج نے اپنی تمام توانائیاں دہشتگردوں کے خلاف جھونک دیں۔

فوج کی جانب سے مشکل علاقوں کو مد نظر رکھتے ہوئے آپریشن کی تیاریاں کی گئیں اور سب سے بڑھ کر اپنا دفاع انتہائی مضبوط بنایا گیا۔
دہشتگردوں کو کامیابیاں اس لیے ملتی رہیں کہ وہ عوام اور سیکیورٹی اہلکاروں میں اپنا خوف قائم کرنے میں کامیاب ہوچکے تھے، جب دہشتگردوں کو ایک کامیابی ملتی، وہ کسی چیک پوسٹ پر قبضہ کرتے یا کوئی کارروائی کرتے تو اس کا سیکیورٹی فورسز پر بہت برا اثر پڑتا۔

دہشتگردوں کے اس ایڈونٹیج کو ختم کرنے کیلئے فوج کی جانب سے حکمت عملی بنائی گئی کہ آپریشن پوری تیاری سے کریں گے اور پھر جس پر قبضہ کرلیا، اس کا دفاع ہر صورت ممکن بنائیں گے۔

شمالی وزیرستان میں آپریشن کے دوران پاک فوج نے جب کچھ پہاڑی علاقے دہشتگردوں کے قبضے سے چھڑائے تو اس کے بعد دہشتگردوں نے بہت شدید مزاحمت کی، دہشتگردوں نے ایک ایک پہاڑ یا اس کے کچھ حصے کے دوبارہ حصول کیلئے سترہ، سترہ حملے بھی کیے تاہم پاک فوج کی جانب سے ہر بار انہیں ناکام کردیا گیا۔

دہشتگرد جب اپنے ٹھکانے بچانے میں ناکام رہے، حملوں کے باوجود واپس حاصل نہ کرسکے تو نہ صرف انہیں افغانستان فرار ہونا پڑا بلکہ ان کے لڑنے کی قوت بھی انتہائی کمی آئی جس سے ہردن کے ساتھ انہیں شکست دینا آسان ہوتا گیا۔

مقامی آبادی جو پہلے دہشتگردوں کے خوف سے پاک فوج سے تعاون نہیں کرتی تھی جب اس نے دہشتگردوں کو بھاگتے اور مرتے دیکھا تو اس نے بھی ہمت پکڑی اور فوج سے تعاون شروع کردیا جس کی بدولت پاک فوج امن قائم کرنے میں کامیاب ہوئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں